آزاد نظمیں

اجمل سراج

ستمبر 7, 2018

سال نو

اگست 7, 2017

یہ بات سمجھ میں آئی نہیں

دسمبر 31, 2016

گُلِ لالہ

میں نے دیکھا ہے پیپل کے پودوں کو چھجوں پہ اُگتے ہوئے اور دیوار کو توڑ کر اپنی شاخیں بڑھاتے ہوئے میں نے دیکھا ہے صحرا کی تپتی ہوئی ریت […]
دسمبر 31, 2016

دھرتی ماں کا انسان سے خطاب

میں بچھائی گئی ہوں تمہارے لےے اور سجائی گئی ہوں تمہارے لےے میرے بچو سدا مسکراتے رہو میری گودی میں پینگیں بڑھاتے رہو گنگناتے رہولہلہاتے رہو میرے دریا سمندر تمہارے […]
دسمبر 31, 2016

ایک اچھوتا خیال

اس دنیا میں سب سے تیزی سے کیا پھیلتا ہے ؟ کون ہے جو اربوں لوگوں کی زندگی سے کھیلتا ہے؟ وائرس کسی بیماری کا؟ غربت اور لاچاری کا ؟ […]
//]]>